ہوم / پلیئرآف دی ویک / پلیئرآف دی ویک- شاہین شاہ آفریدی

پلیئرآف دی ویک- شاہین شاہ آفریدی


گزشتہ ہفتے (پانچ سے گیارہ نومبر2018ئ) کے دوران شائقین کرکٹ کو بھرپور کرکٹ دیکھنے کوملی،پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان تین ون ڈے میچوں کی سیریزکے علاوہ انگلینڈ اور میزبان سری لنکا کے درمیان سیریزکا پہلا گالے ٹیسٹ کھیلا گیا ۔بھارت اور ویسٹ انڈیز سیریزکے درمیان دو ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنلز کھیلے گئے۔جنوبی افریقہ اور آسٹریلیاکی ٹیمیں کینگروزکے دیس میں کھیلے گئے دو ون ڈے انٹرنیشنلز میں مدمقابل آئیں جبکہ میزبان بنگلہ دیش نے آخری (ڈھاکہ) ٹیسٹ میں زمبابوے کی میزبانی کی۔ان تمام میچز کے دوران کئی بیٹسمینوں وبولروں نے نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

گزشتہ ہفتے کی سب سے بڑی انفرادی اننگز انگلش اوپنر کیٹن جیننگز نے کھیلی جس نے گالے ٹیسٹ میں اپنی کیرئیربیسٹ 146*رنزکی اننگز سمیت ٹیسٹ میچ میں مجموعی طورپر192رنزبنائے جو گزشتہ ہفتے کسی بھی بلے باز کا سب سے بڑا مجموعہ تھا۔اس طرح جنوبی افریقی بلے باز ڈیوڈ ملر نے آسٹریلیاکے خلاف سیریزکے آخری ون ڈے میچ میں 139 رنزکی شاندار اننگز کھیل کر اپنی ٹیم کو تیسرا ون ڈے اورسیریز جتواتے ہوئے مین آف دی میچ ایوارڈ حاصل کیا۔

اسی میچ میں اُن کے کپتان فاف ڈوپلیسی نے 125رنزکی شاندار اننگزکھیلی جبکہ حریف بلے باز شان مارش نے بھی جوابی سنچری (106رنز) جڑی۔ڈھاکہ ٹیسٹ میں بنگلہ دیشی وکٹ کیپر بیٹسمین مشفیق الرحیم نے آئوٹ ہوئے بغیر 113*رنزبنائے تو روہت شرما نے ناقابل شکست 111* رنزکی صورت میں ٹی ٹوئنٹی سنچری داغی۔

بولرز پر نگاہ ڈالیں تو کیوی بولرلوکی فرگوسن نے پاکستان کے خلاف آخری ون ڈے میچ میں 5/45کی کیریئربیسٹ کارکردگی سمیت ہفتے بھر میں سب سے زیادہ گیارہ وکٹیں حاصل کیں تاہم ان میں سے زیادہ تر وکٹیں ٹیل اینڈر بلے بازوں کی تھیں۔

گزشتہ ہفتے پاکستانی نوجوان پیسر شاہین شاہ آفریدی کا جواب نہ تھاجس نے تیسرے ون ڈے میچ کی نامکمل اننگز کے باوجود تین میچز میں محض11.33کی بہترین اوسط اور13.8کے اسٹرائک ریٹ سے محض 20.5اوورزمیں 9وکٹیںلیں جو ہفتے بھرمیں کسی بھی بولر کی بہترین اوسط اور اسٹرائک ریٹ ہونے کے ساتھ ساتھ دوسری زیادہ وکٹیں تھیںجسے اگر آخری ون ڈے میچ میںپورے اوورزکرانے کا موقع مل جاتا تو شاید ہفتے کا ٹاپ وکٹ ٹیکر بھی وہی ہوتا۔اس شاندار کارکردگی پر شاہین شاہ آفریدی کو ’اسپورٹس لنک پلیئرآف دی ویک‘ منتخب کیا گیاہے۔

گزشتہ انڈر 19ورلڈکپ سے شہرت پانے والے شاہین شاہ آفریدی کو ابھی صرف چھ ہی ون ڈے انٹرنیشنل میچز کھیلنے کو ملے ہیں جن میں اُس نے 17.61کی لاجواب اوسط اور 21.6کے عمدہ اسٹرائک ریٹ سے 13وکٹیں اپنے کھاتے میں درج کرالی ہیں۔ اس طویل القامت میڈیم پیسر نے رواں سال ایشیاء کپ سے اپنے ون ڈے کیرئیر کا آغازکیاتھا جہاں وہ افغانستان کے خلاف ون ڈے ڈیبیوکے علاوہ بنگلہ دیش کے خلاف میچ میں دو،دووکٹیں حاصل کرنے میں کامیاب رہے البتہ بھارت کے خلاف میچ میں اُسے کوئی وکٹ نہ مل سکی۔

ایشیاء کپ کے بعد سلیکٹرزنے اُسے نیوزی لینڈکے خلاف حالیہ ون ڈے سیریزمیں بھی موقع دیاجس کے پہلے دونوں ون ڈے میچز میں اُس نے چار،چار وکٹیں حاصل کرنے سمیت سیریزکا اختتام 9وکٹوں پر کیا جس کی بدولت وہ 19 سال سے کم عمری میں ایک سیریزمیں زیادہ وکٹیں لینے والے دُنیاکے تیسرے بولر بھی بن گئے۔اگر اُسے تیسرے ون ڈے میچ میں بارش حائل نہ ہوتی تو عین ممکن تھا کہ وہ کم عمری میں ایک سیریزمیںزیادہ وکٹیں لینے کا وقاریونس کا عالمی ریکارڈ بھی توڑ دیتا۔

نیوزی لینڈکے خلاف حالیہ میچز شاہین شاہ آفریدی کے کیریئر کی محض دوسری ون ڈے سیریز تھی جس میں اُس نے نہ صرف دوسرے میچ کے بہترین کھلاڑی ہونے کا اعزاز حاصل کیا بلکہ مین آف دی سیریز ایوارڈ بھی اپنے نام کیاجواُس کے روشن مستقبل کا عندیہ ہے۔ اس نوجوان بولرزنے نہایت ہی کم عمری اور کم وقت میں خودکو انٹرنیشنل لیول پر مناتے ہوئے اپنے کپتان اور کوچ سمیت سلیکٹرزکا بھرپوراعتماد پالیاہے۔

یہی وجہ ہے کہ رواں سال ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کرکٹ سے اپنے سفرکا آغازکرنے والے اس بولر کوون ڈے کیپ کے ساتھ ساتھ نیوزی لینڈکے خلاف آنے والی ٹیسٹ سیریز کیلئے بھی پاکستانی اسکواڈ میں منتخب کرلیاگیا ہے۔اُمیدہے کہ آنے والے عرصے میں یہ نوجوان فاسٹ بولر پاکستان کرکٹ ٹیم کیلئے کئی کارنامے سرانجام دیتے ہوئے اپنا اورملک کا نام روشن کرے گا!!

ہر ہفتے کے نمایاں کارکردگی دکھانے والے پلیئرز اور سب سے نمایاں پلیئرپر مشتمل سلسلہ ’پلیئرآف دی ویک‘ ہر ہفتے ’اسپورٹس لنک‘ میگزین میں ملاحظہ کریں


Facebook Comments

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

شاہین آفریدی کی لاہورقلندرزکے مالک کو حیران کن پیشکش کا انکشاف

پی ایس ایل3کے دوران جہاں لاہورقلندرزکو لگاتار شکستوں کے غم سہنا پڑے وہیں کچھ دل …

error: Content is protected !!