ہوم / اعدادوشمار / چھ اہم ریکارڈز جو پہلے دو پاک- آسٹریلیا میچز میں ٹوٹ گئے

چھ اہم ریکارڈز جو پہلے دو پاک- آسٹریلیا میچز میں ٹوٹ گئے


پاکستان اور آسٹریلیاکے درمیان یواے ای میں کھیلی جارہی پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز کے پہلے دو میچز کھیلے جاچکے ہیں ۔ان دونوں ہی میچز میں آسٹریلیا نے فتح حاصل کرکے سیریز میں دو،صفر کی برتری حاصل کرلی ہے جسے اب سیریزجیتنے کیلئے مزید ایک فتح کی ضرورت ہے جبکہ پاکستان کو سیریز اپنے نام کرنے کیلئے اب اگلے تینوں میچز جیتنا ہوں گے۔

ان دو میچز کے دوران بننے اور ٹوٹنے والے چند اہم ریکارڈزکی تفصیل اگلی سطور میں پیش کی جارہی ہے۔

یواے ای میں ہائیسٹ اسکورکا ریکارڈ ٹوٹ گیا

پاکستان کرکٹ ٹیم نے آسٹریلیاکے خلاف شارجہ میں کھیلے گئے دوسرے ون ڈے انٹرنیشنل میچ میں محمد رضوان کی سنچری کے علاوہ کپتان شعیب ملک کے 60رنز کی بدولت سات وکٹوں کے نقصان پر284رنزبنائے جو پاکستان کا کینگروز کے خلاف پانچواں بڑا ون ڈے مجموعہ ہے جبکہ گزشتہ اٹھارہ سالوں میں دوسرا بڑا اسکور ہے۔

یہ یواے ای کے میدانوں پر پاکستان کا کینگروز کے خلاف سب سے بڑا مجموعہ بھی ہے جہاں اس سے قبل پاکستان کا ہائیسٹ اسکور 266/7تھا جو 1990ء میں بنادیا تھا۔یوں بالاآخر 19 سال بعد یواے ای میں کینگروزکے خلاف ہائیسٹ اسکورکا پاکستانی ریکارڈ ٹوٹ گیا۔

پاکستان کیخلاف کینگروزنے دوسرا بڑا ہدف عبورکرلیا

آسٹریلیا نے پاکستان کے خلاف شارجہ میں کھیلے گئے دوسرے ون ڈے انٹرنیشنل میچ میں 285رنزکا ہدف صرف دو وکٹوں کے نقصان پر عبورکرلیا جو اُن کا پاکستان کے خلاف عبورکیاجانے والا دوسرا بڑا ہدف ہے۔کینگروز ، گرین شرٹس کے خلاف اس سے بڑا واحد بڑا ہدف 1998ء میں عبورکرچکے ہیں جنہوں نے لاہورکے مقام پر 316 رنز کا ہدف عبورکرکے ناقابل انداز میں فتح حاصل کی تھی۔

اس سے قبل حالیہ یواے ای سیریزکے پہلے میچ میں آسٹریلیانے 281رنز کا ہدف عبورکیاتھا جو اب کینگروزکی جانب سے گرین شرٹس کے خلاف عبورکئے جانے والے بڑے اہداف میں تیسرے نمبرپر چلاگیاہے۔

علاوہ ازیں، حالیہ سیریزکے پہلے دونوں میچز میں آسٹریلیا نے پاکستان کے خلاف 200سے زائد رنزکے اہداف محض دو وکٹوں کے نقصان پر عبورکیا۔اس سے قبل کبھی ایسا نہیں ہواتھا کہ آسٹریلیانے 200 سے زائد رنزکا ہدف تین سے کم وکٹیں گنواکر پوراکیاہو۔ کینگروز نے پاکستان کے خلاف صرف سات بار 250یا اس سے زائد رنزکا ہدف عبورکیاہے۔

آسٹریلیا بڑے اہداف عبورکرنے والی دوسری کامیاب ٹیم بن گئی

آسٹریلیانے آرون فنچ اور شان مارش کی شاندار بیٹنگ کے سبب پاکستان کے خلاف پہلے ون ڈے میچ میں 281رنز جبکہ دوسرے میچ میںفنچ اور عثمان خواجہ کی عمدہ بیٹنگ کی بدولت 285رنز کا ہدف محض دو وکٹوں کے نقصان پر پورا کیا۔یہ 21واں موقع تھا کہ کینگروزنے ون ڈے کرکٹ میں 280 یا اس سے زائد رنزکا ہدف عبورکیا جو بھارت کے بعد اتنے بڑے اہداف کے تعاقب میں دوسری زیادہ فتوحات ہیں۔

سری لنکن 20بار 280+ رنزکے اہداف عبورکرکے تیسرے نمبر پر ہے۔اتنے بڑے اہداف کے تعاقب میں زیادہ فتوحات کی فہرست میں پاکستان ٹیم آٹھویں نمبر ہے جس نے بارہ بار اتنے بڑے اہداف عبورکئے ہیں۔

پاکستانی ون ڈے کرکٹرزکی تعداد222ہوگئی

آسٹریلیاکے خلاف شارجہ میں کھیلے گئے پہلے ون ڈے انٹرنیشنل میچ میں پاکستان ٹیم کی جانب سے شان مسعود اور محمد عباس نے اپنے کیریئر زکا محدوداوورزکا پہلا پہلا میچ کھیلا جبکہ دوسرے میچ میں محمد حسنین کو ون ڈے کیپ دی گئی۔ جس سے پاکستانی ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹرکی تعداد 222ہوگئی ہے۔

2019ء میں اب تک چار پاکستانی کرکٹرز نے ون ڈے ڈیبیوکیاہے۔حالیہ سیریز سے قبل حسین طلعت یہ اعزاز حاصل کرچکے ہیں۔اس سے قبل گزشتہ سال یعنی 2018ء میں صرف دو پاکستانی کرکٹرز شاہین شاہ آفریدی اور آصف علی نے ون ڈے ڈیبیوز کئے تھے۔

آرون فنچ پاکستان کیخلاف دوسری بڑی اننگز کھیلنے والے آسٹریلوی بلے باز بن گئے

آسٹریلوی کپتان آرون فنچ نے شارجہ کے مقام پر کھیلے گئے دوسرے میچ میں 143 گیندوں پر گیارہ چوکوں اور چھ چھکوں سے مزین 153*رنزکی ناقابل شکست اننگز کھیل کر پاکستان کے خلاف دوسری بڑی اننگز کھیلنے والے آسٹریلوی بیٹسمین ہونے کا اعزاز حاصل کرلیا۔

یہ محض دوسرا موقع ہے کہ کسی آسٹریلوی بیٹسمین نے ایک روزہ کرکٹ میں پاکستان کے خلاف ڈیڑھ سو سے زائد رنزکی اننگز کھیلی۔ اس سے قبل یہ اعزاز صرف ڈیوڈوارنرکو حاصل تھا جس نے جنوری 2017ء میں ایڈیلیڈکے مقام پر 128 گیندوں پر 19چوکوں اور پانچ چھکوں کی مددسے 179رنزکی اننگز کھیلی تھی۔

واضح رہے کہ حالیہ سیریز سے قبل آرون فنچ پاکستان کے خلاف پہلے چار میچز میں کبھی 20رنز نہیں بناپائے تھے۔

محمد رضوان آسٹریلیاکے خلاف سنچری داغنے والے دوسرے پاکستانی وکٹ کیپر بن گئے

پاکستانی وکٹ کیپر بیٹسمین محمد رضوان نے شارجہ کے مقام پر کھیلے گئے دوسرے ون ڈے میچ میں گیارہ چوکوں سے مزین 115رنز کی شاندار اننگز کھیل کر آسٹریلیاکے خلاف سنچری داغنے والے دوسرے وکٹ کیپر بیٹسمین ہونے کا اعزاز حاصل کرلیا۔اس سے قبل یہ اعزاز صرف کامران اکمل کو حاصل تھا جنہوں نے 2009ء میں ابوظہبی کے مقام پر تیرہ چوکوں سے مزین 116*رنزکی ناقابل شکست اننگز کھیل کر یہ کارنامہ سرانجام دیاتھا۔

واضح رہے کہ یہ محمد رضوان کے ون ڈے کیریئر کی اولین سنچری تھی ،اس سے قبل اُن کا ہائیسٹ اسکور 75*رنزتھا جو 2015ء میں ہرارے کے مقام پر زمبابوے کے خلاف بنایاتھا۔ آسٹریلیا کے خلاف 115رنزکی حالیہ اننگز نے محمد رضوان کو ون ڈے کرکٹ میں سنچری بنانے والا چوتھا وکٹ کیپر بھی بنادیاہے۔اس سے قبل کامران اکمل، عمراکمل اور سرفرازاحمد یہ کارنامہ سرانجام دے چکے ہیں۔

پاکستان کیخلاف دوسری بڑی کینگروشراکت

دوسرے ون ڈے میچ میں آسٹریلوی کپتان آرون فنچ نے ساتھی اوپنر عثمان خواجہ کے ساتھ مل کر اپنی ٹیم کو 209رنزکا اوپننگ اسٹینڈ دیا جو آسٹریلوی ہسٹری میں پاکستان کے خلاف مجموعی طورپر دوسری جبکہ آسٹریلیا سے باہر سب سے بڑی شراکت ہے۔اس سے قبل میتھوہیڈ اور ڈیوڈوارنر نے 2017ء میں گرین شرٹس کے خلاف پہلی ہی وکٹ پر 284رنزجوڑے تھے۔

عثمان خواجہ اور ڈیوڈوارنر نے حالیہ ڈبل سنچری شراکت سے قبل آسٹریلیا سے باہرکسی بھی کینگروجوڑی کی پاکستان کے خلاف سب سے بڑی شراکت 197*رنز پر مشتمل تھی جو 2009ء میں مائیکل کلارک اور شین واٹسن نے ابوظہبی کے مقام پر بنائی تھی۔

دیگر اہم اسٹوریاں پڑھیں


Facebook Comments

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

آرون فنچ نے پاکستان کیخلاف زیادہ رنز کاریکارڈ بنا ڈالا

آسٹریلیا کے کپتان آرون فنچ نے پاکستان کے خلاف یواے ای میں کھیلی گئی پانچ …

error: Content is protected !!