ہوم / ٹاپ اسٹوریاں / ون ڈے نتائج،پاکستان کو سب سے زیادہ 22فیصد کمی کا سامنا

ون ڈے نتائج،پاکستان کو سب سے زیادہ 22فیصد کمی کا سامنا


2017ء کے مقابلے میں 2018ء کے بارہ ماہ کے دوران پاکستان کو ون ڈے میچز میں نتائج کے اعتبار سے 22 فیصد کمی کا سامناکرنا پڑا جو دوبرسوں میں کسی بھی ٹیم کے نتائج میں سب سے بڑی گراوٹ ہے۔

گزشتہ دوبرسوں میں تمام ٹیموں کی کارکردگی کا موازنہ کریں تو پاکستان اور آسٹریلیاکی کارکردگی میں نمایاں گراوٹ دکھائی دیتی ہے۔گرین شرٹس کی فتوحات گزشتہ سال کی نسبت 22 فیصد کمی دیکھنے میں آئی جبکہ آسٹریلیا اور سری لنکا کے نتائج میں بھی اٹھارہ،اٹھارہ فیصدگراوٹ ہوئی۔

گزشتہ سال کے مقابلے میں 2018ء میں صرف چار ٹیموں کے نتائج میں بہتری آئی اور حیران کن طورپر ان میں سے تین ٹیمیں آئی سی سی ون ڈے رینکنگ چارٹ کی ٹاپ ٹین ٹیموں میں آخری درجوں پر موجود ہیں۔جن میں بنگلہ دیش نے سب سے زیادہ37فیصد بہتری پیداکی جو 2017 ء میں 28فیصد کامیابیاں کے مقابلے میںحالیہ بارہ ماہ میں65فیصد میچز جیتنے میں کامیاب رہی۔اس طرح ویسٹ انڈیزنے 31فیصد ، افغانستان نے سولہ فیصد جبکہ نیوزی لینڈنے پانچ فیصد بہتری پیدا کی۔

2018ء کے مزیداعدادوشمار،رپورٹس اور تجزیئے ملاحظہ کریں

دیگر اہم اسٹوریاں پڑھیں

Facebook Comments

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

سال میں زیادہ چھکوں کا عالمی ریکارڈ ٹوٹ گیا

2018ء کے ٹی ٹوئنٹی کیلنڈرایئرمیں بلے بازوں نے 967 بار گیند کوبائونڈری لائن کی سیرکرائی …

error: Content is protected !!