ہوم / ٹاپ فائیو / پاکستان کی کامیاب 5اوپننگ ون ڈے جوڑیاں!!

پاکستان کی کامیاب 5اوپننگ ون ڈے جوڑیاں!!


فخرزماں اور امام الحق کی حالیہ شاندار کارکردگی نے ون ڈے میچوں میںپاکستان کرکٹ ٹیم کا اوپننگ کا مسئلہ حل ہونے کے قریب ترپہنچادیاہے۔اس جوڑی نے حالیہ دورۂ زمبابوے کے دوران چوتھے ون ڈے میچ میں304 رنز کی ریکارڈساز شراکت قائم کی تھی جو ون ڈے ہسٹری میں پہلی ٹرپل سنچری اوپننگ شراکت ہے۔

اس کے علاوہ بھی یہ جوڑی اب تک شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کررہی ہے جس نے آٹھ ون ڈے میچز میں ایک ساتھ اوپننگ کرتے ہوئے چار سنچری اور دو نصف سنچری شراکتوں سمیت 109.75 رنز فی شراکت کی شاندار اوسط سے 878رنز جوڑے ہیں جونہ صرف پاکستان بلکہ دُنیا کی کسی بھی اوپننگ جوڑی کی سب سے زیادہ اوسط ہے ۔

فخرزماں اور امام الحق فی شراکت سو سے زائد رنز بنانے والی واحد پاکستانی اوپننگ جوڑی دار بھی ہیں جن کے بعد دوسرے نمبرپر سعید انور اور شاہد انور کی جوڑی ہیں جنہوں نے 93.00 کی اوسط سے رنزجوڑے تھے تاہم اس جوڑی کو صرف ایک ہی میچ میں ایک ساتھ اوپننگ کرنے کا موقع مل سکاتھا۔

پاکستان میں کھیلوں کے سرفہرست اسپورٹس میگزین ’’اسپورٹس لنک‘‘ نے اپنے مقبول سلسلے ’’ٹاپ فائیو‘‘ میں بہترین پاکستانی اوپننگ جوڑیوں کو ہی شامل کیا ہے جنہیں کم ازکم پانچ اننگزمیں ایک ساتھ بیٹنگ کرنے کا موقع ملا۔پاکستان کی ان پانچ کامیاب اوپننگ جوڑیوں کا احوال یہاں انٹرنیٹ صارفین کیلئے بھی پیش کیا جارہاہے۔

پاکستان کی تاریخ میں اب تک 50اوپننگ جوڑیوں کو پانچ یا زائد ون ڈے میچز میں پاکستانی اننگز کا آغازکرنے کا موقع مل سکاہے۔ جن میں کوئی بھی جوڑی فخرزماں اور امام الحق کی چار سنچریوں سے زائد سنچری اوپننگ شراکتیں قائم نہیں کرسکی اور ان پچاس میں صرف تین ہی ایسی اوپننگ جوڑیاں ہیں جنہیں 70 رنز فی شراکت سے زائداوسط سے رنزجوڑنے کا اعزاز حاصل ہے۔

یہاں کم ازکم پانچ میچز میں اننگزکاآغازکرتے ہوئے بہترین شراکت اوسط سے رنزجوڑنے والی پانچ پاکستانی جوڑیوں کی تفصیل آپ کی خدمت میں پیش کی جارہی ہے۔’ٹاپ فائیو‘ میں عامرسہیل اور سعید انورکی جوڑی کو نہ دیکھ کر کچھ قارئین کو حیرت ضرور ہوگی مگر یہ حقیقت ہے کہ یہ جوڑی اوسط کے اعتبار سے کامیاب پاکستانی اوپننگ جوڑیوں میں 20ویں نمبرہے جو 73میچز میں 39.12کی اوسط سے رنز جوڑسکی تھی جس میں صرف تین سنچری شراکتیں شامل تھیں۔

.1 فخرزماں- امام الحق (109.75)

یہ پانچ یا زائد میچز میں اننگزکاآغاز کرنے والی نہ صرف پاکستان بلکہ مکمل ون ڈے ہسٹری کی واحد اوپننگ جوڑی ہے جسے اوسطاً فی میچ 100سے زائد رنزجوڑنے کا اعزاز حاصل ہے۔اس فہرست میں دوسرے نمبرپرسری لنکا کے مہیلا جے وردنے اور اُپل تھرنگا کی جوڑی ہے جو 88.22کی شراکت اوسط سے رنز جوڑنے میں کامیاب رہی تھی۔

سوسے زائد شراکت اوسط سے رنزجوڑنے والے فخرزماں اور امام الحق کو بلاشک و شبہ فی الوقت پاکستان کی بہترین اوپننگ جوڑی ہونے کا اعزاز حاصل ہے ۔اس جوڑی نے اب تک فی اوور5.95رنزکے رن ریٹ سے اسکورکارڈکو محترک رکھاہے جوکم ازکم 500 شراکتی رنز بنانے والی پاکستانی اوپننگ جوڑیوں میں سب سے عمدہ رن ریٹ ہے۔شاہد آفریدی نے مختلف اوپنرزکے ساتھ مل کر رن فی بال سے بھی زائد رن ریٹ سے رنز جوڑے تھے مگر وہ کسی ساتھی اوپنر کے ساتھ مل کر 500 رنز مکمل نہیں کرسکے تھے۔

فخرزماں اور امام الحق کی جوڑی نے اب تک جن آٹھ میچز میں اوپننگ کی ہے،اُن میں سے صرف دو میچز میں انہوں نے پہلی وکٹ75سے کم اسکور پر گنوائی ہے، یعنی آٹھ میں سے چھ اننگزمیں اس جوڑی نے 75+رنزکی شراکتیں قائم کی ہیں جن میں 304 رنز کی ریکارڈساز شراکت سمیت چار سنچری شراکتیں بھی شامل ہیں۔اوسطاً ہر دوسرے میچ میں سنچری شراکتیں قائم کرنے والی یہ جوڑی بلاشبہ پاکستان کی بہترین اوپننگ جوڑی بن کر اُبھری ہے جو جلد پانچ اوپننگ سنچری شراکتیں قائم کرنے والی پہلی پاکستانی جوڑی بھی بن جائے گی۔

.2 سعید انور- آصف مجتبیٰ (74.33)

بائیں ہاتھ سے بیٹنگ کرنے والے ان بلے بازوں کی جوڑی کو محض چھ میچز میں ہی ایک ساتھ اننگز شروع کرنے کا موقع مل سکاتھا جس میں انہوں نے ایک ایک سنچری اور دو نصف سنچری شراکتوں سمیت 74.33کی شاندار اوسط سے 446رنز جوڑے تھے۔

اس جوڑی کو 1993ء کے آخری حصے میں شارجہ کپ اور زمبابوے کے خلاف ہوم سیریزمیں پاکستانی اننگز کا آغاز کرنے کا موقع مل سکاتھا ۔اس جوڑی نے اپنی پہلی شراکت داری میں سری لنکا کے خلاف 171رنز جوڑ کر پاکستانی شائقین کے چہروں پر مسکراہٹیں بکھیر دی تھیںجس کے بعدیہ جوڑی 86اور88رنز کی مزید شراکتیں بھی قائم کرنے میں کامیاب رہی مگر اس کے باوجود اس جوڑی کو 1993ء میں زمبابوے کے خلاف ہوم سیریز کے بعد دوبارہ کبھی نہ آزمایا گیا۔

.3 محمد حفیظ – ناصر جمشید (70.50)

2012/13ء کے کامیاب دورۂ بھارت کے بعد اُمید ہوچلی تھی کہ ناصر جمشید اور محمد حفیظ نے پاکستان کرکٹ ٹیم کا اوپننگ کا مسئلہ حل کردیاہے ۔یہ جوڑی نے جنوری2013ء میں کولکتہ کے مقام پر 141 رنزکی شاندار شراکت قائم کرنے سے قبل 2012ء کے دوران ایشیاء کپ میں پاکستا ن کو بنگلہ دیش کے خلاف 135اوربھارت کے خلاف 224 رنزکا اوپننگ اسٹینڈ دے چکی تھی۔

جس کے بعد یواے ای سیریزکے دوران آسٹریلیاکے خلاف 66اور 129 رنزکی شراکتیں قائم کرکے اس جوڑی نے پاکستان ٹیم منیجمنٹ کی اُمیدیں بڑھا دی تھی لیکن بعدازاں مارچ2013ء کے دورۂ جنوبی افریقہ میں ہونے والی ناکامی نے اس اوپننگ جوڑی کو ہمیشہ کیلئے توڑدیا۔

.4 عامر سہیل – سلیم الہی (68.80)

1995ء کے آخری حصے میں اس جوڑی کو محض پانچ میچز میں ہی ایک ساتھ بیٹنگ کرنے کا موقع مل سکاتھا۔ سلیم الہی جب ڈیبیو ون ڈے میچ میں سنچری اسکور کرنے والے پہلے پاکستانی بلے باز بنے تھے تو اُس کے ساتھ دوسرے اینڈ سے عامرسہیل نے ہی اننگز کا آغازکیاتھا۔

اس میچ میں 156رنزکی شراکت قائم کرنے والی اس جوڑی نے سیریزکے آخری میچ میں 55 رنزکی شراکت قائم کرنے کے بعد شارجہ کپ کے میچ میں سری لنکا کے خلاف 107رنزکی شراکت قائم کرکے خود کو کامیاب جوڑیوں میں شمارکرالیاتھا لیکن اس سنچری شراکتی کے بعد اس جوڑی کومزید صرف ایک ہی میچ میںپاکستانی اننگز شروع کرنے کا موقع مل سکا۔

.5 سعید انور- وجاہت اللہ واسطی(67.75)

ورلڈکپ99میں بننے والی اس جوڑی نے پہلے دو میچزمیں آسٹریلیاکے خلاف 32اورجنوبی افریقہ کے خلاف 41رنزکی شراکت قائم کرنے کے بعد زمبابوے کے خلاف آخری سپرسکس میچ میں 95 رنز جوڑے تھے جس کے بعد نیوزی لینڈکے خلاف سیمی فائنل میں اس جوڑی نے 194رنز کی ریکارڈ ساز شراکت قائم کرتے ہوئے پاکستان کو فائنل میں پہنچایا۔

بعدازاں جب آسٹریلیاکے خلاف ورلڈکپ 99ء کے فائنل میں 21رنزبنانے والی اس جوڑی نے اگلے میچ میں ٹورنٹومیں ویسٹ انڈیزکیخلاف پاکستان کو 131رنزکا اوپننگ اسٹینڈ دیا لیکن اس کے بعد اس جوڑی کو مزید صرف دو ہی میچز میں پاکستانی اننگز شروع کرنے کا موقع مل سکا۔

کرکٹ کے کسی شعبے میں نمایاں پرفارمنس دینے والے پانچ کرکٹرز،ٹیمیں یا پارٹنرزکے حوالے سے ہر ہفتے نئے موضوع پر تفصیل ’’اسپورٹس لنک‘‘ کے سلسلے ’’ ٹاپ فائیو‘‘ میں ملاحظہ کریں


Facebook Comments

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

ورلڈکپ سے قبل پاکستان ٹیم کی بڑی خامی دُورکریں گے: ہیڈکوچ

پاکستان کرکٹ ٹیم کی یو اے ای میں آسٹریلیا ٹیم کیخلاف پانچ صفر سے ناکامی …

error: Content is protected !!