ہوم / ٹاپ اسٹوریاں / دھونی کی مشکلات بڑھنے لگیں،تین میچز کی پابندی کا مطالبہ

دھونی کی مشکلات بڑھنے لگیں،تین میچز کی پابندی کا مطالبہ


ڈک آئوٹ سے گرائونڈمیں کود پر امپائر سے اُلجھنے جیسے سنگین جرم کے باوجود محض آدھی میچ فیس کے جرمانے پر چھوٹ جانے والے چنائی سپرکنگز کے کپتان ایم ایس دھونی کے خلاف آوازیں مسلسل بلند ہونے لگی ہیں جس میں اب بشن سنگھ بیدی کے علاوہ سابق بھارتی اوپنر وریندرسہواگ بھی شامل ہوگئے ہیں۔

’’ مسٹر کول‘‘ کے نام سے مشہور سابق کپتان مہندر سنگھ دھونی کو آئی پی ایل کے میچ میں گرائونڈ میں داخل ہونے اور امپائرنگ معاملات میں دخل اندازی کرنے پر جہاں شائقین ان کو تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں وہیں پر سابق کرکٹرز کی طرف سے بھی انہیں آڑے ہاتھوں لیا جا رہا ہے۔

لٹل ماسٹر سچن ٹنڈولکر اور دی وال کے نام سے مشہور راہول ڈریوڈ کے بعد مہندر سنگھ دھونی بھارتی کرکٹ کا ایک معتبر چہرہ ہیں تا ہم گزشتہ جمعرات کو چنائی سپر کنگز اور راجستھان رائلز کے درمیان میچ کے آخری لمحات میں نو بال کے معاملے پر مسٹر کول اپنا ٹیمپر لوز کر بیٹھے اور گرائونڈ میں جا کر امپائر کو کھری کھری سنا دی جس نے پہلے نو بال کا اشارہ دیا تا ہم جلد ہی اسے کینسل بھی کر دیا۔

ڈگ آئوٹ میں بیٹھے دھونی اس عمل پر غصے میں آگئے اور انہوں نے آ ئی پی ایل کوڈ آف کنڈکٹ لیول ٹو آرٹیکل 2.20 کی خلاف ورزی کرتے ہوئے گرائونڈ میں داخل ہو کر امپائر پر چڑھائی شروع کر دی۔

سابق کرکٹر وریندر سہواگ نے سابق کپتان کے اس عمل کو غلط قرار دیتے ہوئے ان پر دو سے تین میچوں کی پابندی کا مطالبہ کیا ہے جبکہ بشن سنگھ بیدی نے کہا ہے کہ دھونی نے امپائر کو دبائو میں لا کر کرکٹ کا چہرہ مسخ کرنے کی کوشش کی اورکوئی بھی کرکٹ کے کھیل سے بڑا نہیں ہے۔ یاد رہے کہ آئی پی ایل انتظامہ نے دھونی کو میچ فیس کا صرف 50 فیصد جرمانہ کر دیا ہے۔

دیگر اہم اسٹوریاں پڑھیں


Facebook Comments

error: Content is protected !!