ہوم / ٹاپ اسٹوریاں / سال میں زیادہ چھکوں کا عالمی ریکارڈ ٹوٹ گیا

سال میں زیادہ چھکوں کا عالمی ریکارڈ ٹوٹ گیا


2018ء کے ٹی ٹوئنٹی کیلنڈرایئرمیں بلے بازوں نے 967 بار گیند کوبائونڈری لائن کی سیرکرائی جو کسی بھی کیلنڈرایئرمیں مختصر فارمیٹ کے میچز میں لگنے والے سب سے زیادہ چھکے ہیں ۔

پاکستان میں کھیلوں کے معروف میگزین ’اسپورٹس لنک‘ کے سالنامہ ایڈیشن میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق سال میں زیادہ چھکوں کا ریکارڈ اس سے قبل 2016ء میں قائم ہواتھا جس میں کھیلے گئے 100 ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچز میں چھکوں کی تعداد پہلی بار 900کی حد پار کرتے ہوئے 961تک جا پہنچی تھی۔2018ء میں نسبتاً 19کم میچز کھیلے گئے مگر اس کے باوجود ان بارہ میں بلے بازوں نے آٹھ زائد چھکے لگائے۔

2018ء کئی اور اعتبار سے سب سے اگر نہ سہی ، مگر کئی کیلنڈرایئرز سے مختلف سال ثابت ہوا۔اس حوالے سے مختصراً اعدادوشمار ذیل میں دئیے جارہے ہیں۔

دوسری زیادہ سنچریاں

2018ء کے بارہ ماہ کے دوران مختصر فارمیٹ کے انٹرنیشنل میچز میں بلے بازوں نے مجموعی طورپر سات سنچریاں بنائیں جو محض 2016 کے علاوہ کسی بھی دوسرے سال میں بننے والی سب سے زیادہ سنچریاں ہیں مگر یہ حقیقت ہے کہ 2018ء میں نسبتاً 19 کم میچز کھیلے گئے۔ یوں اگر100 سے کم میچز والے ٹی ٹوئنٹی کیلنڈرایئرزپر نگاہ ڈالیں تو 2018سات سنچریوں کے ساتھ سب سے آگے دکھائی دیتا ہے جس کے بعد 2017ء میں دوسری زیادہ (چھ) سنچریاں بنی تھیں۔

دوسرے زیادہ چوکے

حالیہ بارہ ماہ کے دوران کھیلے گئے 81ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچز میں بلے بازوں نے مجموعی طورپر 2029بار گیند کو بائونڈری لائن کی سیر کرائی جو 100 ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچز کی میزبانی کرنے والے تاریخ کے اکلوتے سال (2016ئ) کے بعد محض دوسرا کیلنڈرایئرہے جس میں چھوٹی بائونڈریوں کی تعداد دو ہزار چوکوں سے تجاوز کرگئی۔

دوسری زیادہ ففٹیاں

2018ء میں کھیلے گئے 81 ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچز میں بلے بازوں نے 104ففٹیاں اسکورکیں جو محض100میچز والے 2016 کے بعد کی کسی بھی ٹی ٹوئنٹی کیلنڈرایئرمیں بننے والی دوسری زیادہ ففٹیاں ہیں۔ان دو کیلنڈرایئرزکے علاوہ کسی اور سال میں اس فارمیٹ کے انٹرنیشنل میچز میں سو ففٹیاں نہیں بن سکی ہیں۔اس فہرست میں تیسرا سال 2012ء کا ورلڈٹی ٹوئنٹی ایئرہے جس میںبلے بازوں نے 98 نصف سنچریاں بنائی تھیں۔

دیگر اہم اسٹوریاں پڑھیں

 


Facebook Comments

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

آسٹریلیا2018ء کی بدترین ون ڈے ٹیم ثابت ہوئی

2018ء میں انٹرنیشنل کرکٹ کھیلنے والی دُنیاکی تمام اٹھارہ ٹیموں کو فتح وشکست کے اعتبار …

error: Content is protected !!