ہوم / ٹاپ اسٹوریاں / آسٹریلیا2018ء کی بدترین ون ڈے ٹیم ثابت ہوئی

آسٹریلیا2018ء کی بدترین ون ڈے ٹیم ثابت ہوئی


2018ء میں انٹرنیشنل کرکٹ کھیلنے والی دُنیاکی تمام اٹھارہ ٹیموں کو فتح وشکست کے اعتبار سے ترتیب دیاجائے تو ماہرین و شائقین کی حیرت کی انتہاء نہیں رہتی جب عالمی چیمپئن آسٹریلیا اس فہرست میں سب سے نچلی پوزیشن پر موجود ہے حتیٰ کہ چھ ایسوسی ایٹ ٹیمیں بھی اُن سے کہیں بہتر نتائج دینے میں کامیاب رہی ہیں۔

آسٹریلیانے سال کے دوران کھیلے گئے تیرہ ون ڈے انٹرنیشنلز میں گیارہ شکستوں کے بدلے صرف دوہی کامیابیاں حاصل کیں جو دونوں ہی اپنے ملک میں آسٹریلیااورجنوبی افریقہ کے خلاف تھیں گویا کینگروزپورے سال کے دوران اپنے ملک سے باہر ایک ون ڈے میچ بھی نہ جیت پائے۔

یہ آسٹریلیاکی 45سالہ ون ڈے تاریخ میں واحد واقعہ ہے جب وہ اپنے ملک سے باہر دوسے زائد میچز کھیلنے کے باوجود کوئی ون ڈے میچ نہ جیت سکی۔اس سے قبل 1980ء اور1988ء میں وہ اَوے یا نیوٹرل مقام پر کوئی میچ جیتنے میں ناکام رہی تھی لیکن ان دونوں کیلنڈرایئرزمیں وہ اپنے ملک سے باہر صرف ایک یا دومیچز ہی کھیلی تھی۔

2018ء میں کینگروزکا فتح وشکست کا تناسب 0.18رہاجو اُس کی مجموعی ون ڈے تاریخ میں کسی بھی ون ڈے کیلنڈرایئرکا بدترین سال ثابت ہوا۔آسٹریلیانے اب تک جن کیلنڈرایئرز میں دس سے زائد میچز کھیلے ہیں، اُن میں 2018ء ہی وہ سال ہے جس میں اُن کی فتوحات کی تعداد پانچ سے نیچے رہی ہے جس سے اندازہ لگایا جاسکتاہے کہ حالیہ بارہ کرکٹ آسٹریلیا کیلئے کتنے بھاری ثابت ہوئے ہیں۔

دوسری جانب، شکستوں کے مقابلے میں زائد فتوحات کے تناسب سے بھارتی ٹیم سرفہرست رہی جس نے 3.50کے تناسب سے کامیابیاں سمیٹیںجن میں روہت شرما کی قیادت میں ایشیاء کپ میں کھیلے گئے پانچوں میچز کی فتح بھی شامل ہے۔سال کے دوران تین درجے پھلانگ کر آئی سی سی ون ڈ ے رینکنگ میں ٹا پ پوزیشن پر قبضہ جمانے والی انگلش ٹیم بارہ ماہ میں محض چھ شکستوں کے بدلے سترہ کامیابیاں حاصل کرکے دوسرے بہترین تناسب کی مالک بنی۔بھارت اور انگلینڈکے بعد محض نیوزی لینڈ تیسری ایسی ٹیم تھی جس نے 2018ء سے شکستوں سے دوگنی فتوحات حاصل کیں۔

گزشتہ بارہ میں ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ میں اِن – ایکشن دکھائی دینے والی اٹھارہ ٹیموں میں سے نو ٹیموں نے ففٹی پلس نتائج دیتے ہوئے شکستوں سے زائد یاکم ازکم ناکامیوں کے برابر فتوحات بھی حاصل کیں جبکہ 2018ء میں 50فیصد سے کم نتائج دینے والی نو ٹیموں میں پاکستان، ویسٹ انڈیز، سری لنکااور آسٹریلیاکی ٹیمیں شامل ہیں۔

2018ء کے مزیداعدادوشمار،رپورٹس اور تجزیئے ملاحظہ کریں

دیگر اسٹوریاں پڑھیں

Facebook Comments

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

ون ڈے نتائج،پاکستان کو سب سے زیادہ 22فیصد کمی کا سامنا

2017ء کے مقابلے میں 2018ء کے بارہ ماہ کے دوران پاکستان کو ون ڈے میچز …

error: Content is protected !!