ہوم / ٹاپ فائیو / 5بلے بازجوتیزترین سنچری کاڈی ویلیئرزکاریکارڈتوڑسکتے ہیں

5بلے بازجوتیزترین سنچری کاڈی ویلیئرزکاریکارڈتوڑسکتے ہیں


موجودہ دورکی تیزترہوتی کرکٹ میں کوئی بھی ریکارڈ محفوظ نہیں رہا۔آسٹریلیاکے خلاف تیسرے ون ڈے میچ میں انگلینڈ کے 21چھکوں سمیت 481کے مجموعے پر بھی شاید اب ماہرین کو حیرت نہیں ہے۔تیزہوتی کرکٹ میں انگلینڈنے ہائیسٹ اسکورکا اپناہی ریکارڈ توڑڈالاہے تاہم تیز ترین سنچری کا عالمی ریکارڈ گزشتہ تین برسوں سے جنوبی افریقہ کے سابق بلے باز ابراہام ڈی ویلیئرزکے پاس ہے تاہم موجودہ وقت میں تین ایسے پلیئرزموجود ہیں جو تیزترین سنچر ی کا ریکارڈاپنے قبضے میں کرسکتے ہیں۔اس رپورٹ میں انہی پلیئرزکاجائزہ پیش کیا جارہاہے۔

.1 جوزبٹلر

ممکنہ طورپر جوزبٹلر انگلش تاریخ کا محدود اوورزکا کامیاب ترین بلے باز ہے جس کا شمار دورِ حاضر کے خطرناک ترین بلے بازوں میں ہوتا ہے۔اس وقت وہ انگلینڈکی جانب سے تیز ترین سنچری اسکورکرنے والا بلے باز ہے جس نے 2015ء میں پاکستان کے خلاف محض46گیندوں پر یہ کارنامہ سرانجام دیاتھا۔

انگلینڈکی جانب سے بنائی گئی تینوں تیز ترین ون ڈے سنچریاں جوزبٹلر ہی کے نام ہیں ۔اُس نے انگلینڈکی محدود اوورز کے میچوں میں شاندارکارکردگی میں نمایاں کرداراداکیاہے جس نے حالیہ آئی پی ایل میں تن تنہا اپنی ٹیم راجستھان رائلز کو فتوحات دلائی تھیں۔

جوزبٹلر کی جارحیت کا اندازہ یہاں سے لگایا جاسکتاہے کہ اُس نے اب تک کے اپنے کیرئیر میں 118.65کے اسٹرائک ریٹ سے رنزبنائے ہیں جو ون ڈے تاریخ میں کم ازکم ایک ہزار رنز بنانے والے بلے بازوں میں محض گلن میکسویل کے بعد کسی بھی بلے باز کا دوسراہائیسٹ اسٹرائک ریٹ ہے۔

کیرئیرکی96میں سے 23اننگزمیں140سے زائد اسٹرائک ریٹ سے اسکورکرنے والے جوزبٹلر نے متعدد بار دھوا ں دار اننگز کھیلی ہیں۔2013ء میں نیوز ی لینڈکے خلاف 293.75کے اسٹرائک ریٹ سے محض16گیندوں پر 47* رنزکی ناقابل شکست اننگزہویا پاکستان کے خلاف دبئی کے مقام پر 223.07کے اسٹرائک ریٹ سے 52 گیندوں پر 116*رنز…جوزبٹلر کئی مواقعوں پربولروں کے ساتھ قصاب والا سلوک کرچکاہے۔اس لئے اُسے ابراہام ڈی ویلیئرز کا عالمی ریکارڈ توڑنے کی اہلیت رکھنے والے بلے بازوں میں باآسانی شمار کیا جاسکتاہے۔

.2آندرے رسل

آندرے دورِ حاضر کا سب سے بے رحم بلے باز کہاجاسکتاہے جس نے متعدد بار اپنی دھواں دار بیٹنگ سے حریف بولنگ لائن کے بخیے ادھیڑے ہیں۔30سالہ آل رائونڈر نے کیربیئن پریمیئرلیگ میں ٹرینباگو نائٹ رائیڈرزکے خلاف ٹورنامنٹ کی تیز ترین سنچری جڑی تھی۔جس نے 23گیندوں پر پچاس رنز مکمل کرنے کے بعد مزید21گیندوں کا سہارا لیتے ہوئے 100رنز مکمل کرلئے تھے جس میں گیارہ چھکے بھی شامل تھے۔

ورلڈکپ2015ء کے دوران کرائسٹ چر چ کے مقا م پر پاکستا ن کے خلاف کھیلتے ہوئے جب اُس نے ہاتھ کھولے تھے تو تیز ترین ففٹی اور سنچری کا ریکارڈ اُس سے دُور دکھائی نہیں دے رہاتھا۔اگر آٹھویں نمبرپر کھیلنے والے آندرے رسل کو مزید کچھ اوور مل جاتے تو13 گیندوں پر تین چوکوں اور چار چھکوں سے مزین 323.07کے اسٹرائک ریٹ کی اننگزکو42*رنز سے کہیں آگے لے جاسکتا تھا۔

اس جلاد صفت کیربیئن آل رائونڈر کا ون ڈے انٹرنیشنل میچوں میں اسٹرائک ریٹ 130.81ہے جوتاحال ون ڈے کیریئر کے ایک ہزار رنز مکمل نہیں کرسکا۔اس لئے اگر ایک ہزار کے بجائے کم ازکم500رنز بنانے والے بیٹسمینوں کو اسٹرائک ریٹ کے اعتبار سے ترتیب دیں تو آندرے رسل ہی سب سے آگے کھڑا دکھائی دیتا ہے جوفی سوبالز پر اوسطاً 130 سے زائد رنز بنانے والا دُنیا کا واحد بلے باز ہے۔

آندرے رسل نے اپنے ون ڈے کیریئر میں تاحال کوئی سنچری اسکورنہیں کی ہے جس کی بڑی اُس کا نچلے نمبروں پر بیٹنگ کرنا ہے ۔اس لئے ممکن ہے کہ جب وہ کیریئر کی پہلی سنچری داغے تو وہ تاریخ کی تیز ترین سنچری ہی ہو۔

آندرے رسل کے اندر بڑے شاٹس کھیلنے کی صلاحیت بدرجہ اتم موجود ہے، دُنیا کا کوئی بھی گرائونڈ جمیکا کے اس جلاد صفت بلے باز کیلئے زیادہ بڑانہیں ہے جس نے مجموعی 250 ٹی ٹوئنٹی میچز میں 267چھکے لگانے کے علاوہ 51ون ڈے میچوں میں53بار گیند بائونڈری لائن کے باہر پھینکی ہے۔

مثبت ڈوپ ٹیسٹ کے بعد کم بیک کرنے والے آندرے رسل کا طویل کیریئر اُس کا منتظر ہے جسے ویسٹ انڈین ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی ٹیم میں اہم کردار نبھانا ہے۔اس کوشش میں اُس کیلئے 30 گیندوں پر 100رنز مکمل کرنا زیادہ مشکل کارنامہ نہیں ہوگا۔

.3 گلن میکسویل

تابڑ توڑ حملو ں کے ساتھ بولروں پرچڑھ دوڑنے کی گلن میکسویل کی صلاحیت سے کون واقف نہیں۔اگر پانچ سو کے بجائے ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ میں زیادہ اسٹرائک ریٹ سے کم ازکم ایک ہزار رنزبنانے والے بیٹسمینوں کو ترتیب دیں تو دُنیا کا کوئی بھی بلے باز اس کینگرو بلے باز کا مقابلہ نہیں کرسکتا۔

گلن میکسویل ایک ہزار رنز مکمل کرنے والے بلے بازوں میں واحد بیٹسمین ہے جس کا فی سوبالز اسکورنگ ریٹ 120 رنز سے زائد ہے۔ 75اننگزمیں 121.30 کے اسٹرائک ریٹ سے رنز بنانے والا یہ بلے بازگیندوں سے دوگنے رنز کی پانچ بڑی اننگز کھیل چکاہے جس میں زمبابوے کے خلاف 46 گیندوں پر نو چوکوں اور پانچ چھکوں سے مزین 93رنزکی اننگز بھی شامل ہے جبکہ 2013ء میں بنگلور کے مقام پر تین چوکوں اور سات چھکوں سے مزین 22 گیندوں پر 60رنزکی آج بھی بھارتی بولروں کو ڈرائونے خواب کی طرح یاد ہوگی۔

2016ء میں ٹوئنٹی20انٹرنیشنل میچ میں پالی کیلے کے مقام پر میزبان سری لنکن بولروں کا حشر آج بھی شائقین کو یادہوگا جس میں اُس نے آئوٹ ہوئے بغیر 65 گیندوں پر چودہ چوکوں اور نو چھکوں سمیت 145*رنزکی دھواں دار اننگز کھیل کر اپنی ٹیم کو263/3کا مجموعہ دلادیاتھا۔

گلن میکسویل نہ صرف ایک ہزار ون ڈے رنز بنانے والے بیٹسمینوں میں رنزبنانے کی رفتار میں سب سے آگے ہے بلکہ ٹی ٹوئنٹی20انٹرنیشنل میچوں میں کم ازکم500رنزبنانے والے دُنیا کے 108بلے بازوں میں سب سے زیادہ (165.68)اسٹرائک ریٹ کا مالک ہے۔

ان تمام خوبیوں کی موجودگی میںگلن میکسویل کو تیز ترین سنچری کا عالمی ریکارڈ توڑنے والے اُمیدواروں میں شامل کرنے میں کسی کو ہچکچاہٹ نہیں ہوگی۔

ابراہام ڈی ویلیئرزکی تیز ترین سنچری کا عالمی ریکارڈ توڑنے والے ممکنہ پانچ میں تین بلے بازوں کا جائزہ یہاں پیش کیا گیاہے جبکہ پانچ بلے بازوں کا مکمل جائزہ ’اسپورٹس لنک‘ میگزین کے تازہ ایڈیشن (یکم تا7جولائی) میں شائع کیا جائے گا۔


Facebook Comments

error: Content is protected !!